صحیح بخاریکتاب العمل فی الصلاۃ

صحیح بخاری جلد دؤم : كتاب العمل في الصلاة ( نماز کے کام کے بارے میں) : حدیث:-1214

كتاب العمل في الصلاة
کتاب: نماز کے کام کے بارے میں

Chapter No: 12

باب مَا يَجُوزُ مِنَ الْبُصَاقِ وَالنَّفْخِ فِي الصَّلاَةِ

What is said about blowing and spitting while in As-Salat

باب : نماز میں تھوکنا اور پھونکنا درست ہے


[quote arrow=”yes” "]

1: حدیث اعراب کے ساتھ:

2: حدیث عربی رسم الخط میں بغیراعراب کے ساتھ:

3: حدیث اردو رسم الخط میں بغیراعراب کے ساتھ:

4: حدیث کا اردو ترجمہ:

5: حدیث کی اردو تشریح:

English Translation :6 

[/quote]

حدیث اعراب کے ساتھ:  

حدیث نمبر:1214         

حَدَّثَنَا مُحَمَّدٌ، حَدَّثَنَا غُنْدَرٌ، حَدَّثَنَا شُعْبَةُ، قَالَ سَمِعْتُ قَتَادَةَ، عَنْ أَنَسٍ ـ رضى الله عنه ـ عَنِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏”‏ إِذَا كَانَ فِي الصَّلاَةِ فَإِنَّهُ يُنَاجِي رَبَّهُ، فَلاَ يَبْزُقَنَّ بَيْنَ يَدَيْهِ وَلاَ عَنْ يَمِينِهِ، وَلَكِنْ عَنْ شِمَالِهِ تَحْتَ قَدَمِهِ الْيُسْرَى ‏”‏‏‏‏.

.حدیث عربی بغیراعراب کے ساتھ:    

1214 ـ حدثنا محمد، حدثنا غندر، حدثنا شعبة، قال سمعت قتادة، عن أنس ـ رضى الله عنه ـ عن النبي صلى الله عليه وسلم قال ‏”‏ إذا كان في الصلاة فإنه يناجي ربه، فلا يبزقن بين يديه ولا عن يمينه، ولكن عن شماله تحت قدمه اليسرى ‏”‏‏.‏

حدیث اردو رسم الخط میں بغیراعراب کے ساتھ:  

1214 ـ حدثنا محمد، حدثنا غندر، حدثنا شعبۃ، قال سمعت قتادۃ، عن انس ـ رضى اللہ عنہ ـ عن النبی صلى اللہ علیہ وسلم قال ‏”‏ اذا کان فی الصلاۃ فانہ یناجی ربہ، فلا یبزقن بین یدیہ ولا عن یمینہ، ولکن عن شمالہ تحت قدمہ الیسرى ‏”‏‏.‏

‏‏‏‏‏‏‏اردو ترجمہ:  

حضرت انس بن مالک رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ نبیﷺ نے فرمایا: جب تم میں سے کوئی نماز میں ہو تو وہ اپنے رب سے سرگوشی کرتا ہے۔ اس لیے اس کو چاہیے سامنے نہ تھوکے ، اور نہ داہنی طرف البتہ بائیں طرف بائیں پاؤں کےنیچے تھوک لے ۔


حدیث کی اردو تشریح:   

 

English Translation: 

Narrated By Anas : The Prophet said, "Whenever anyone of you is in prayer, he is speaking in private to his Lord and so he should neither spit in front of him nor on his right side but to his left side under his left foot.”

Related Articles

Back to top button
Close