صحیح بخاریکتاب الغسل

صحیح بخاری جلد اول :كتاب الغسل (غسل کا بیان) : حدیث 285

كتاب الغسل
کتاب: غسل کے احکام و مسائل
(THE BOOK OF GHUSL (WASHING OF THE WHOLE BODY

 

24- بَابُ الْجُنُبُ يَخْرُجُ وَيَمْشِي فِي السُّوقِ وَغَيْرِهِ:
باب: اس تفصیل میں کہ جنبی گھر سے باہر نکل سکتا اور بازار وغیرہ جا سکتا ہے۔

[quote arrow=”yes”]

1: حدیث اعراب کے ساتھ:

2: حدیث عربی رسم الخط میں بغیراعراب کے ساتھ:

3: حدیث اردو رسم الخط میں بغیراعراب کے ساتھ:

4: حدیث کا اردو ترجمہ:

5: حدیث کی اردو تشریح:

English Translation :6 

[/quote]

حدیث اعراب کے ساتھ:  

حدیث نمبر285:

حَدَّثَنَا عَيَّاشٌ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا عَبْدُ الْأَعْلَى، ‏‏‏‏‏‏حَدَّثَنَا حُمَيْدٌ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ بَكْرٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِي رَافِعٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ لَقِيَنِي رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ وَأَنَا جُنُبٌ، ‏‏‏‏‏‏فَأَخَذَ بِيَدِي فَمَشَيْتُ مَعَهُ حَتَّى قَعَدَ، ‏‏‏‏‏‏فَانْسَلَلْتُ فَأَتَيْتُ الرَّحْلَ فَاغْتَسَلْتُ، ‏‏‏‏‏‏ثُمَّ جِئْتُ وَهُوَ قَاعِدٌ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ:‏‏‏‏ أَيْنَ كُنْتَ يَا أَبَا هِرٍّ؟ فَقُلْتُ لَهُ:‏‏‏‏ فَقَالَ:‏‏‏‏ "سُبْحَانَ اللَّهِ يَا أَبَا هِرٍّ، ‏‏‏‏‏‏إِنَّ الْمُؤْمِنَ لَا يَنْجُسُ”.

الخط میں بغیراعراب کے ساتھ:         

285 ـ حدثنا عياش، قال حدثنا عبد الأعلى، حدثنا حميد، عن بكر، عن أبي رافع، عن أبي هريرة، قال لقيني رسول الله صلى الله عليه وسلم وأنا جنب، فأخذ بيدي، فمشيت معه حتى قعد فانسللت، فأتيت الرحل، فاغتسلت ثم جئت وهو قاعد فقال ‏”‏ أين كنت يا أبا هر ‏”‏ فقلت له‏.‏ فقال ‏”‏ سبحان الله يا أبا هر إن المؤمن لا ينجس ‏”‏‏.‏

حدیث اردو رسم الخط میں بغیراعراب کے ساتھ:  

285 ـ حدثنا عیاش، قال حدثنا عبد الاعلى، حدثنا حمید، عن بکر، عن ابی رافع، عن ابی ہریرۃ، قال لقینی رسول اللہ صلى اللہ علیہ وسلم وانا جنب، فاخذ بیدی، فمشیت معہ حتى قعد فانسللت، فاتیت الرحل، فاغتسلت ثم جیت وہو قاعد فقال ‏”‏ این کنت یا ابا ہر ‏”‏ فقلت لہ‏.‏ فقال ‏”‏ سبحان اللہ یا ابا ہر ان المومن لا ینجس ‏”‏‏.‏

ا اردو ترجمہ:  

ہم سے عیاش نے بیان کیا، انہوں نے کہا ہم سے عبدالاعلیٰ نے بیان کیا، انہوں نے کہا ہم سے حمید نے بکر کے واسطہ سے بیان کیا، انہوں نے ابورافع سے، وہ ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے، کہا کہ میری ملاقات رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے ہوئی۔ اس وقت میں جنبی تھا۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے میرا ہاتھ پکڑ لیا اور میں آپ صلی اللہ علیہ وسلم کے ساتھ چلنے لگا۔ آخر آپ صلی اللہ علیہ وسلم ایک جگہ بیٹھ گئے اور میں آہستہ سے اپنے گھر آیا اور غسل کر کے حاضر خدمت ہوا۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم ابھی بیٹھے ہوئے تھے، آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے دریافت فرمایا اے ابوہریرہ! کہاں چلے گئے تھے، میں نے واقعہ بیان کیا تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا سبحان اللہ! مومن تو نجس نہیں ہوتا۔

حدیث کی اردو تشریح:   

اس حدیث کی اور باب کی مطابقت بھی ظاہر ہے کہ ابوہریرہ رضی اللہ عنہ حالت جنابت میں راہ چلتے ہوئے آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم سے ملے۔

English Translation: 

Narrated Abu Huraira: Allah’s Apostle came across me and I was Junub He took my hand and I went along with him till he sat down I slipped away, went home and took a bath. When I came back. he was still sitting there. He then said to me, "O Abu Huraira! Where have you been?’ I told him about it The Prophet said, "Subhan Allah! O Abu Huraira! A believer never becomes impure.”

Related Articles

Back to top button
Close