صحیح بخاریکتاب الصلاۃ

صحیح بخاری جلد اول :كتاب الصلاة (نماز کا بیان) : حدیث:-515

كتاب الصلاة
کتاب: نماز کے احکام و مسائل
.(THE BOOK OF AS-SALAT (THE PRAYER
105- بَابُ مَنْ قَالَ لاَ يَقْطَعُ الصَّلاَةَ شَيْءٌ:
باب: اس شخص کی دلیل جس نے یہ کہا کہ نماز کو کوئی چیز نہیں توڑتی۔

1: حدیث اعراب کے ساتھ:

2: حدیث عربی رسم الخط میں بغیراعراب کے ساتھ:

3: حدیث اردو رسم الخط میں بغیراعراب کے ساتھ:

4: حدیث کا اردو ترجمہ:

5: حدیث کی اردو تشریح:

English Translation :6 

[/quote]

حدیث اعراب کے ساتھ:  

حدیث نمبر:515

حَدَّثَنَا إِسْحَاقُ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ أَخْبَرَنَا يَعْقُوبُ بْنُ إِبْرَاهِيمَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنِي ابْنُ أَخِي ابْنِ شِهَابٍ، ‏‏‏‏‏‏أَنَّهُ سَأَلَ عَمَّهُ عَنِ الصَّلَاةِ يَقْطَعُهَا شَيْءٌ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ:‏‏‏‏ لَا يَقْطَعُهَا شَيْءٌ، ‏‏‏‏‏‏أَخْبَرَنِي عُرْوَةُ بْنُ الزُّبَيْرِ، ‏‏‏‏‏‏أَنَّ عَائِشَةَ زَوْجَ النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَتْ:‏‏‏‏ "لَقَدْ كَانَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ يَقُومُ فَيُصَلِّي مِنَ اللَّيْلِ وَإِنِّي لَمُعْتَرِضَةٌ بَيْنَهُ وَبَيْنَ الْقِبْلَةِ عَلَى فِرَاشِ أَهْلِهِ”.

حدیث عربی بغیراعراب کے ساتھ:         

515 ـ حدثنا إسحاق، قال أخبرنا يعقوب بن إبراهيم، قال حدثني ابن أخي ابن شهاب، أنه سأل عمه عن الصلاة، يقطعها شىء فقال لا يقطعها شىء، أخبرني عروة بن الزبير أن عائشة زوج النبي صلى الله عليه وسلم قالت لقد كان رسول الله صلى الله عليه وسلم يقوم فيصلي من الليل، وإني لمعترضة بينه وبين القبلة على فراش أهله‏.‏

حدیث اردو رسم الخط میں بغیراعراب کے ساتھ:  

515 ـ حدثنا اسحاق، قال اخبرنا یعقوب بن ابراہیم، قال حدثنی ابن اخی ابن شہاب، انہ سال عمہ عن الصلاۃ، یقطعہا شىء فقال لا یقطعہا شىء، اخبرنی عروۃ بن الزبیر ان عایشۃ زوج النبی صلى اللہ علیہ وسلم قالت لقد کان رسول اللہ صلى اللہ علیہ وسلم یقوم فیصلی من اللیل، وانی لمعترضۃ بینہ وبین القبلۃ على فراش اہلہ‏.‏

‏‏اردو ترجمہ:  

ہم سے اسحاق بن ابراہیم نے بیان کیا، کہا کہ ہمیں یعقوب بن ابراہیم نے خبر دی، کہا کہ مجھ سے میرے بھتیجے ابن شہاب نے بیان کیا، انہوں نے اپنے چچا سے پوچھا کہ کیا نماز کو کوئی چیز توڑ دیتی ہے؟ تو انہوں نے فرمایا کہ نہیں، اسے کوئی چیز نہیں توڑتی۔ کیونکہ مجھے عروہ بن زبیر رضی اللہ عنہ نے خبر دی ہے کہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی زوجہ مطہرہ عائشہ رضی اللہ عنہا نے فرمایا کہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کھڑے ہو کر رات کو نماز پڑھتے اور میں آپ صلی اللہ علیہ وسلم کے سامنے آپصلی اللہ علیہ وسلم کے اور قبلہ کے درمیان عرض میں بستر پر لیٹی رہتی تھی۔

حدیث کی اردو تشریح:   

 

English Translation: 

Narrated `Aisha: (the wife of the Prophet) Allah’s Apostle used to get up at night and pray while I used to lie across between him and the Qibla on his family’s bed.

Related Articles

Back to top button
Close