صحیح بخاریکتاب بدء الوحی

صحیح بخاری جلد اول : کتاب بدء الوحی (وحی کا بیان) : حدیث 1

صحیح بخاری ۔ جلد اول ۔ وحی کا بیان ۔ حدیث 1

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم پر نزول وحی کس طرح شروع ہوئی، اور اللہ تعالیٰ کا قول کہ ہم نے تم پر وحی بھیجی جس طرح حضرت نوح علیہ السلام اور ان کے بعد پیغمبروں پر وحی بھیجی ۔

راوی: حمیدی , سفیان , یحیی بن سعید انصاری , محمد بن ابراہیم تیمی , علقمہ بن وقاص لیثی

حدیث اعراب کے ساتھ:

حَدَّثَنَا الْحُمَيْدِيُّ قَالَ حَدَّثَنَا سُفْيَانُ قَالَ حَدَّثَنَا يَحْيَی بْنُ سَعِيدٍ الْأَنْصَارِيُّ قَالَ أَخْبَرَنِي مُحَمَّدُ بْنُ إِبْرَاهِيمَ التَّيْمِيُّ أَنَّهُ سَمِعَ عَلْقَمَةَ بْنَ وَقَّاصٍ اللَّيْثِيَّ يَقُولُ سَمِعْتُ عُمَرَ بْنَ الْخَطَّابِ رَضِيَ اللَّهُ عَنْهُ عَلَی الْمِنْبَرِ يَقُولُ سَمِعْتُ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّی اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ يَقُولُ إِنَّمَا الْأَعْمَالُ بِالنِّيَّاتِ وَإِنَّمَا لِامْرِئٍ مَا نَوَی فَمَنْ کَانَتْ هِجْرَتُهُ إِلَی دُنْيَا يُصِيبُهَا أَوْ إِلَی امْرَأَةٍ يَنْکِحُهَا فَهِجْرَتُهُ إِلَی مَا هَاجَرَ إِلَيْهِ

حدیث عربی رسم الخط میں بغیراعراب کے ساتھ:

حدثنا الحميدي قال حدثنا سفيان قال حدثنا يحيی بن سعيد الأنصاري قال أخبرني محمد بن إبراهيم التيمي أنه سمع علقمة بن وقاص الليثي يقول سمعت عمر بن الخطاب رضي الله عنه علی المنبر يقول سمعت رسول الله صلی الله عليه وسلم يقول إنما الأعمال بالنيات وإنما لامرئ ما نوی فمن کانت هجرته إلی دنيا يصيبها أو إلی امرأة ينکحها فهجرته إلی ما هاجر إليه

حدیث اردو رسم الخط میں بغیراعراب کے ساتھ:

حدثنا محمد بن العلای قال حدثنا حماد بن اسامۃ عن برید بن عبد اللہ عن ابی بردۃ عن ابی موسی عن النبی صلی اللہ علیہ وسلم قال مثل ما بعثنی اللہ بہ من الہدی والعلم کمثل الغیث الکثیر اصاب ارضا فکان منہا نقیۃ قبلت المای فانبتت الکلا والعشب الکثیر وکانت منہا اجادب امسکت المای فنفع اللہ بہا الناس فشربوا وسقوا وزرعوا واصاب منہا طایفۃ اخری انما ہی قیعان لا تمسک مای ولا تنبت کلا فذلک مثل من فقہ فی دین اللہ ونفعہ ما بعثنی اللہ بہ فعلم وعلم ومثل من لم یرفع بذلک راسا ولم یقبل ہدی اللہ الذی ارسلت بہ قال ابو عبد اللہ قال اسحاق عن ابی اسامۃ وکان منہا طایفۃ قیلت المای قاع یعلوہ المای والصفصف المستوی من الارض

حدیث کا اردو ترجمہ:

حمیدی، سفیان، یحیی بن سعید انصاری، محمد بن ابراہیم تیمی، علقمہ بن وقاص لیثی سے روایت کرتے ہیں کہ وہ فرماتے ہیں میں نے حضرت عمر بن خطاب رضی اللہ تعالیٰ عنہ کو منبر پر فرماتے ہوئے سنا کہ میں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کو یہ فرماتے ہوئے سنا کہ اعمال کے نتائج نیتوں پر موقوف ہیں اور ہر آدمی کو وہی ملے گا جس کی اس نے نیت کی، چنانچہ جس کی ہجرت دنیا کے لئے ہو کہ وہ اسے پائے گا، یا کسی عورت کے لئے ہو، کہ اس سے نکاح کرے تو اس کی ہجرت اسی چیز کی طرف شمار ہوگی جس کے لئے ہجرت کی ہو۔

English Translation:

Narrated  ‘Umar bin Al-Khattab:  I heard  Allah’s  Apostle  saying,  "The  reward  of  deeds  depends  upon  the  intentions  and  every  person  will  get the reward according to what he has intended. So whoever emigrated for worldly benefits or for a woman to marry, his emigration was for what he emigrated for.”|

شیر سلفی

شیر سلفی ایک بلاگر اور ویب ڈیزائنر ہیں۔ احیاء السنۃ ویب سائٹس کے تکنیکی معاون ہیں۔ جو کہ اردو ، پشتو، انگریزی میں قرآن و سنت کی دعوت پر مبنی ہیں۔ اس ویب سائٹ (دفاع حدیث) کے منتظم ہیں۔ جو کہ ادارہ احیاء السنۃ فاؤنڈیشن کا ہی ایک پروجیکٹ ہے۔ اپنا ایک بلاگ بھی www.ssatechs.com کے نام سے چلا رہے ہیں۔ آپ ان سے sher.salafe@gmail.com پر رابطہ کر سکتے ہیں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

*

code

Back to top button
Close