صحیح بخاری – حدیث نمبر 183

صحیح بخاری – حدیث نمبر 183

باب: بےوضو ہونے کی حالت میں تلاوت قرآن کرنا وغیرہ اور جو جائز ہیں ان کا بیان۔

حدیث نمبر: 183
حَدَّثَنَا إِسْمَاعِيلُ ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنِي مَالِكٌ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ مَخْرَمَةَ بْنِ سُلَيْمَانَ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ كُرَيْبٍ مَوْلَى ابْنِ عَبَّاسٍ، ‏‏‏‏‏‏أَنَّ عَبْدَ اللَّهِ بْنَ عَبَّاسٍ أَخْبَرَهُ، ‏‏‏‏‏‏أَنَّهُ بَاتَ لَيْلَةً عِنْدَ مَيْمُونَةَ زَوْجِ النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ وَهِيَ خَالَتُهُ، ‏‏‏‏‏‏فَاضْطَجَعْتُ فِي عَرْضِ الْوِسَادَةِ، ‏‏‏‏‏‏وَاضْطَجَعَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ وَأَهْلُهُ فِي طُولِهَا، ‏‏‏‏‏‏فَنَامَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ حَتَّى إِذَا انْتَصَفَ اللَّيْلُ أَوْ قَبْلَهُ بِقَلِيلٍ أَوْ بَعْدَهُ بِقَلِيلٍ، ‏‏‏‏‏‏اسْتَيْقَظَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ فَجَلَسَ يَمْسَحُ النَّوْمَ عَنْ وَجْهِهِ بِيَدِهِ، ‏‏‏‏‏‏ثُمَّ قَرَأَ الْعَشْرَ الْآيَاتِ الْخَوَاتِمَ مِنْ سُورَةِ آلِ عِمْرَانَ، ‏‏‏‏‏‏ثُمَّ قَامَ إِلَى شَنٍّ مُعَلَّقَةٍ، ‏‏‏‏‏‏فَتَوَضَّأَ مِنْهَا فَأَحْسَنَ وُضُوءَهُ، ‏‏‏‏‏‏ثُمَّ قَامَ يُصَلِّي، ‏‏‏‏‏‏قَالَ ابْنُ عَبَّاسٍ:‏‏‏‏ فَقُمْتُ فَصَنَعْتُ مِثْلَ مَا صَنَعَ، ‏‏‏‏‏‏ثُمَّ ذَهَبْتُ، ‏‏‏‏‏‏فَقُمْتُ إِلَى جَنْبِهِ فَوَضَعَ يَدَهُ الْيُمْنَى عَلَى رَأْسِي وَأَخَذَ بِأُذُنِي الْيُمْنَى يَفْتِلُهَا، ‏‏‏‏‏‏فَصَلَّى رَكْعَتَيْنِ، ‏‏‏‏‏‏ثُمَّ رَكْعَتَيْنِ، ‏‏‏‏‏‏ثُمَّ رَكْعَتَيْنِ، ‏‏‏‏‏‏ثُمَّ رَكْعَتَيْنِ، ‏‏‏‏‏‏ثُمَّ رَكْعَتَيْنِ، ‏‏‏‏‏‏ثُمَّ رَكْعَتَيْنِ، ‏‏‏‏‏‏ثُمَّ أَوْتَرَ، ‏‏‏‏‏‏ثُمَّ اضْطَجَعَ حَتَّى أَتَاهُ الْمُؤَذِّنُ، ‏‏‏‏‏‏فَقَامَ فَصَلَّى رَكْعَتَيْنِ خَفِيفَتَيْنِ، ‏‏‏‏‏‏ثُمَّ خَرَجَ فَصَلَّى الصُّبْحَ.

حدیث کی عربی عبارت (بغیر اعراب)

حدیث نمبر: 183
حدثنا إسماعيل ، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ حدثني مالك ، ‏‏‏‏‏‏عن مخرمة بن سليمان ، ‏‏‏‏‏‏عن كريب مولى ابن عباس، ‏‏‏‏‏‏أن عبد الله بن عباس أخبره، ‏‏‏‏‏‏أنه بات ليلة عند ميمونة زوج النبي صلى الله عليه وسلم وهي خالته، ‏‏‏‏‏‏فاضطجعت في عرض الوسادة، ‏‏‏‏‏‏واضطجع رسول الله صلى الله عليه وسلم وأهله في طولها، ‏‏‏‏‏‏فنام رسول الله صلى الله عليه وسلم حتى إذا انتصف الليل أو قبله بقليل أو بعده بقليل، ‏‏‏‏‏‏استيقظ رسول الله صلى الله عليه وسلم فجلس يمسح النوم عن وجهه بيده، ‏‏‏‏‏‏ثم قرأ العشر الآيات الخواتم من سورة آل عمران، ‏‏‏‏‏‏ثم قام إلى شن معلقة، ‏‏‏‏‏‏فتوضأ منها فأحسن وضوءه، ‏‏‏‏‏‏ثم قام يصلي، ‏‏‏‏‏‏قال ابن عباس:‏‏‏‏ فقمت فصنعت مثل ما صنع، ‏‏‏‏‏‏ثم ذهبت، ‏‏‏‏‏‏فقمت إلى جنبه فوضع يده اليمنى على رأسي وأخذ بأذني اليمنى يفتلها، ‏‏‏‏‏‏فصلى ركعتين، ‏‏‏‏‏‏ثم ركعتين، ‏‏‏‏‏‏ثم ركعتين، ‏‏‏‏‏‏ثم ركعتين، ‏‏‏‏‏‏ثم ركعتين، ‏‏‏‏‏‏ثم ركعتين، ‏‏‏‏‏‏ثم أوتر، ‏‏‏‏‏‏ثم اضطجع حتى أتاه المؤذن، ‏‏‏‏‏‏فقام فصلى ركعتين خفيفتين، ‏‏‏‏‏‏ثم خرج فصلى الصبح.

حدیث کی عربی عبارت (مکمل اردو حروف تہجی میں)

حدیث نمبر: 183
حدثنا اسماعیل ، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ حدثنی مالک ، ‏‏‏‏‏‏عن مخرمۃ بن سلیمان ، ‏‏‏‏‏‏عن کریب مولى ابن عباس، ‏‏‏‏‏‏ان عبد اللہ بن عباس اخبرہ، ‏‏‏‏‏‏انہ بات لیلۃ عند میمونۃ زوج النبی صلى اللہ علیہ وسلم وہی خالتہ، ‏‏‏‏‏‏فاضطجعت فی عرض الوسادۃ، ‏‏‏‏‏‏واضطجع رسول اللہ صلى اللہ علیہ وسلم واہلہ فی طولہا، ‏‏‏‏‏‏فنام رسول اللہ صلى اللہ علیہ وسلم حتى اذا انتصف اللیل او قبلہ بقلیل او بعدہ بقلیل، ‏‏‏‏‏‏استیقظ رسول اللہ صلى اللہ علیہ وسلم فجلس یمسح النوم عن وجہہ بیدہ، ‏‏‏‏‏‏ثم قرا العشر الآیات الخواتم من سورۃ آل عمران، ‏‏‏‏‏‏ثم قام الى شن معلقۃ، ‏‏‏‏‏‏فتوضا منہا فاحسن وضوءہ، ‏‏‏‏‏‏ثم قام یصلی، ‏‏‏‏‏‏قال ابن عباس:‏‏‏‏ فقمت فصنعت مثل ما صنع، ‏‏‏‏‏‏ثم ذہبت، ‏‏‏‏‏‏فقمت الى جنبہ فوضع یدہ الیمنى على راسی واخذ باذنی الیمنى یفتلہا، ‏‏‏‏‏‏فصلى رکعتین، ‏‏‏‏‏‏ثم رکعتین، ‏‏‏‏‏‏ثم رکعتین، ‏‏‏‏‏‏ثم رکعتین، ‏‏‏‏‏‏ثم رکعتین، ‏‏‏‏‏‏ثم رکعتین، ‏‏‏‏‏‏ثم اوتر، ‏‏‏‏‏‏ثم اضطجع حتى اتاہ الموذن، ‏‏‏‏‏‏فقام فصلى رکعتین خفیفتین، ‏‏‏‏‏‏ثم خرج فصلى الصبح.

حدیث کا اردو ترجمہ

ہم سے اسماعیل نے بیان کیا، کہا مجھ سے امام مالک نے مخرمہ بن سلیمان کے واسطے سے نقل کیا، وہ کریب ابن عباس (رض) کے آزاد کردہ غلام سے نقل کرتے ہیں کہ عبداللہ بن عباس (رض) نے انہیں خبر دی کہ انہوں نے ایک رات رسول اللہ کی زوجہ مطہرہ اور اپنی خالہ میمونہ (رض) کے گھر میں گزاری۔ (وہ فرماتے ہیں کہ) میں تکیہ کے عرض (یعنی گوشہ) کی طرف لیٹ گیا اور رسول اللہ اور آپ کی اہلیہ نے (معمول کے مطابق) تکیہ کی لمبائی پر (سر رکھ کر) آرام فرمایا۔ رسول اللہ سوتے رہے اور جب آدھی رات ہوگئی یا اس سے کچھ پہلے یا اس کے کچھ بعد آپ بیدار ہوئے اور اپنے ہاتھوں سے اپنی نیند کو دور کرنے کے لیے آنکھیں ملنے لگے۔ پھر آپ نے سورة آل عمران کی آخری دس آیتیں پڑھیں، پھر ایک مشکیزہ کے پاس جو (چھت میں) لٹکا ہوا تھا آپ کھڑے ہوگئے اور اس سے وضو کیا، خوب اچھی طرح، پھر کھڑے ہو کر نماز پڑھنے لگے۔ ابن عباس (رض) کہتے ہیں میں نے بھی کھڑے ہو کر اسی طرح کیا، جس طرح آپ نے وضو کیا تھا۔ پھر جا کر میں بھی آپ کے پہلوئے مبارک میں کھڑا ہوگیا۔ آپ نے اپنا داہنا ہاتھ میرے سر پر رکھا اور میرا دایاں کان پکڑ کر اسے مروڑنے لگے۔ پھر آپ نے دو رکعتیں پڑھیں۔ اس کے بعد پھر دو رکعتیں پڑھیں۔ پھر دو رکعتیں پڑھیں۔ پھر دو رکعتیں، پھر دو رکعتیں، پھر دو رکعتیں پڑھ کر اس کے بعد آپ نے وتر پڑھا اور لیٹ گئے، پھر جب مؤذن آپ کے پاس آیا، تو آپ نے اٹھ کر دو رکعت معمولی (طور پر) پڑھیں۔ پھر باہر تشریف لا کر صبح کی نماز پڑھی۔

حدیث کا انگریزی ترجمہ (English Translation)

Narrated Abdullah bin Abbas (RA): that he stayed overnight in the house of Maimuna the wife of the Prophet, his aunt. He added: I lay on the bed (cushion transversally) while Allahs Apostle ﷺ and his wife lay in the length-wise direction of the cushion. Allahs Apostle ﷺ slept till the middle of the night, either a bit before or a bit after it and then woke up, rubbing the traces of sleep off his face with his hands. He then, recited the last ten verses of Sura Al-Imran, got up and went to a hanging water-skin. He then performed the ablution from it and it was a perfect ablution, and then stood up to offer the prayer. I, too, got up and did as the Prophet ﷺ had done. Then I went and stood by his side. He placed his right hand on my head and caught my right ear and twisted it. He prayed two Rakat then two Rakat and two Rakat and then two Rakat and then two Rakat and then two Rakat (separately six times), and finally one Raka (the Witr). Then he lay down again in the bed till the Muadhdhin came to him where upon the Prophet ﷺ got up, offered a two light Rakat prayer and went out and led the Fajr prayer

اس پوسٹ کو آگے نشر کریں