صحیح بخاریکتاب الجنائز

صحیح بخاری جلد دؤم : کتاب الجنائز( جنازے کے احکام و مسائل) : حدیث:-1364

کتاب الجنائز
کتاب: جنازے کے احکام و مسائل

Chapter No: 83

باب مَا جَاءَ فِي قَاتِلِ النَّفْسِ

What is said about committing suicide.

باب: جو شخص خودکشی کرے اس کی سزا۔

[quote arrow=”yes” "]
1: حدیث اعراب کے ساتھ:

2: حدیث عربی رسم الخط میں بغیراعراب کے ساتھ:

3: حدیث اردو رسم الخط میں بغیراعراب کے ساتھ:

4: حدیث کا اردو ترجمہ:

5: حدیث کی اردو تشریح:

English Translation :6 

[/quote]

حدیث اعراب کے ساتھ:  

حدیث نمبر:1364         

وَقَالَ حَجَّاجُ بْنُ مِنْهَالٍ حَدَّثَنَا جَرِيرُ بْنُ حَازِمٍ، عَنِ الْحَسَنِ، حَدَّثَنَا جُنْدَبٌ ـ رضى الله عنه ـ فِي هَذَا الْمَسْجِدِ فَمَا نَسِينَا، وَمَا نَخَافُ أَنْ يَكْذِبَ جُنْدَبٌ عَنِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏”‏ كَانَ بِرَجُلٍ جِرَاحٌ فَقَتَلَ نَفْسَهُ فَقَالَ اللَّهُ بَدَرَنِي عَبْدِي بِنَفْسِهِ حَرَّمْتُ عَلَيْهِ الْجَنَّةَ ‏”‏‏‏‏‏‏‏.‏

.حدیث عربی بغیراعراب کے ساتھ:    

1364 – وقال حجاج بن منهال حدثنا جرير بن حازم، عن الحسن، حدثنا جندب ـ رضى الله عنه ـ في هذا المسجد فما نسينا، وما نخاف أن يكذب جندب عن النبي صلى الله عليهوسلم  قال ‏”‏ كان برجل جراح فقتل نفسه فقال الله بدرني عبدي بنفسه حرمت عليه الجنة ‏”‏‏.‏

حدیث اردو رسم الخط میں بغیراعراب کے ساتھ:  

1364 ـ وقال حجاج بن منہال حدثنا جریر بن حازم، عن الحسن، حدثنا جندب ـ رضى اللہ عنہ ـ فی ہذا المسجد فما نسینا، وما نخاف ان یکذب جندب عن النبی صلى اللہ علیہوسلم  قال ‏”‏ کان برجل جراح فقتل نفسہ فقال اللہ بدرنی عبدی بنفسہ حرمت علیہ الجنۃ ‏”‏‏.‏

‏‏‏‏‏‏‏اردو ترجمہ:  

حضرت حسن بصری رحمہ اللہ فرماتے ہیں کہ حضرت جندب رضی اللہ عنہ نے اسی (بصرے کی) مسجد میں حدیث بیان کی ہم اس کو بھولے نہیں اور نہ ہم کو یہ خیال ہے کہ جندب رضی اللہ عنہ نے نبی ﷺ پر جھوٹ باندھا ہوگا۔آپ ﷺنے فرمایا: ایک شخص کو زخم لگا اس نے اپنے آپ کو مار ڈالا۔ اللہ تعالیٰ نے فرمایا: میرے بندے نے جان نکالنے میں مجھ پر جلدی کی اس کی سزامیں، میں نے اس پر جنت حرام کردی۔

حدیث کی اردو تشریح:   

 

English Translation: 

Narrated Jundab the Prophet said, "A man was inflicted with wounds and he committed suicide, and so Allah said: My slave has caused death on himself hurriedly, so I forbid Paradise for him.”

Related Articles

Back to top button
Close