صحیح بخاریکتاب الغسل

صحیح بخاری جلد اول :كتاب الغسل (غسل کا بیان) : حدیث 287

كتاب الغسل
کتاب: غسل کے احکام و مسائل
(THE BOOK OF GHUSL (WASHING OF THE WHOLE BODY

 

26- بَابُ نَوْمِ الْجُنُبِ:
باب: اس بارے میں کہ بغیر غسل کئے جنبی کا سونا جائز ہے۔

[quote arrow=”yes”]

1: حدیث اعراب کے ساتھ:

2: حدیث عربی رسم الخط میں بغیراعراب کے ساتھ:

3: حدیث اردو رسم الخط میں بغیراعراب کے ساتھ:

4: حدیث کا اردو ترجمہ:

5: حدیث کی اردو تشریح:

English Translation :6 

[/quote]

حدیث اعراب کے ساتھ:  

حدیث نمبر287:

حَدَّثَنَا قُتَيْبَةُ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا اللَّيْثُ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ نَافِعٍ، ‏‏‏‏‏‏عَنِ ابْنِ عُمَرَ، ‏‏‏‏‏‏أَنَّ عُمَرَ بْنَ الْخَطَّابِ، ‏‏‏‏‏‏سَأَل رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، ‏‏‏‏‏‏أَيَرْقُدُ أَحَدُنَا وَهُوَ جُنُبٌ؟ قَالَ:‏‏‏‏ "نَعَمْ، ‏‏‏‏‏‏إِذَا تَوَضَّأَ أَحَدُكُمْ فَلْيَرْقُدْ وَهُوَ جُنُبٌ”.

الخط میں بغیراعراب کے ساتھ:         

287 ـ حدثنا قتيبة، قال حدثنا الليث، عن نافع، عن ابن عمر، أن عمر بن الخطاب، سأل رسول الله صلى الله عليه وسلم أيرقد أحدنا وهو جنب قال ‏”‏ نعم إذا توضأ أحدكم فليرقد وهو جنب ‏”‏‏.‏

حدیث اردو رسم الخط میں بغیراعراب کے ساتھ:  

287 ـ حدثنا قتیبۃ، قال حدثنا اللیث، عن نافع، عن ابن عمر، ان عمر بن الخطاب، سال رسول اللہ صلى اللہ علیہ وسلم ایرقد احدنا وہو جنب قال ‏”‏ نعم اذا توضا احدکم فلیرقد وہو جنب ‏”‏‏.‏

ا اردو ترجمہ:  

ہم سے قتیبہ بن سعید نے بیان کیا، انہوں نے کہا ہم سے لیث بن سعد نے بیان کیا، انہوں نے نافع سے، وہ ابن عمر رضی اللہ عنہما سے کہ عمر بن خطاب رضی اللہ عنہ نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے پوچھا کہ کیا ہم میں سے کوئی جنابت کی حالت میں سو سکتا ہے؟ فرمایا ہاں، وضو کر کے جنابت کی حالت میں بھی سو سکتے ہو۔

حدیث کی اردو تشریح:   

 

English Translation: 

Narrated `Umar bin Al-Khattab: I asked Allah’s Apostle "Can any one of us sleep while he is Junub?” He replied, "Yes, if he performs ablution, he can sleep while he is Junub.”

Related Articles

Back to top button
Close