صحیح بخاری – حدیث نمبر 218

صحیح بخاری – حدیث نمبر 218

حدیث نمبر: 218
حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ الْمُثَنَّى ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ خَازِمٍ ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا الْأَعْمَشُ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ مُجَاهِدٍ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ طَاوُسٍ ، ‏‏‏‏‏‏عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ مَرَّ النَّبِيُّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ بِقَبْرَيْنِ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ:‏‏‏‏ إِنَّهُمَا لَيُعَذَّبَانِ، ‏‏‏‏‏‏وَمَا يُعَذَّبَانِ فِي كَبِيرٍ، ‏‏‏‏‏‏أَمَّا أَحَدُهُمَا فَكَانَ لَا يَسْتَتِرُ مِنَ الْبَوْلِ، ‏‏‏‏‏‏وَأَمَّا الْآخَرُ فَكَانَ يَمْشِي بِالنَّمِيمَةِ، ‏‏‏‏‏‏ثُمَّ أَخَذَ جَرِيدَةً رَطْبَةً فَشَقَّهَا نِصْفَيْنِ فَغَرَزَ فِي كُلِّ قَبْرٍ وَاحِدَةً، ‏‏‏‏‏‏قَالُوا:‏‏‏‏ يَا رَسُولَ اللَّهِ، ‏‏‏‏‏‏لِمَ فَعَلْتَ هَذَا ؟ قَالَ:‏‏‏‏ لَعَلَّهُ يُخَفِّفُ عَنْهُمَا مَا لَمْ يَيْبَسَا، ‏‏‏‏‏‏وَقَالَ مُحَمَّدُ بْنُ الْمُثَنَّى ، ‏‏‏‏‏‏وَحَدَّثَنَا وَكِيعٌ ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا الْأَعْمَشُ ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ سَمِعْتُ مُجَاهِدًا مِثْلَهُ يَسْتَتِرُ مِنْ بَوْلِهِ.

حدیث کی عربی عبارت (بغیر اعراب)

حدیث نمبر: 218
حدثنا محمد بن المثنى ، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ حدثنا محمد بن خازم ، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ حدثنا الأعمش ، ‏‏‏‏‏‏عن مجاهد ، ‏‏‏‏‏‏عن طاوس ، ‏‏‏‏‏‏عن ابن عباس ، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ مر النبي صلى الله عليه وسلم بقبرين، ‏‏‏‏‏‏فقال:‏‏‏‏ إنهما ليعذبان، ‏‏‏‏‏‏وما يعذبان في كبير، ‏‏‏‏‏‏أما أحدهما فكان لا يستتر من البول، ‏‏‏‏‏‏وأما الآخر فكان يمشي بالنميمة، ‏‏‏‏‏‏ثم أخذ جريدة رطبة فشقها نصفين فغرز في كل قبر واحدة، ‏‏‏‏‏‏قالوا:‏‏‏‏ يا رسول الله، ‏‏‏‏‏‏لم فعلت هذا ؟ قال:‏‏‏‏ لعله يخفف عنهما ما لم ييبسا، ‏‏‏‏‏‏وقال محمد بن المثنى ، ‏‏‏‏‏‏وحدثنا وكيع ، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ حدثنا الأعمش ، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ سمعت مجاهدا مثله يستتر من بوله.

حدیث کی عربی عبارت (مکمل اردو حروف تہجی میں)

حدیث نمبر: 218
حدثنا محمد بن المثنى ، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ حدثنا محمد بن خازم ، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ حدثنا الاعمش ، ‏‏‏‏‏‏عن مجاہد ، ‏‏‏‏‏‏عن طاوس ، ‏‏‏‏‏‏عن ابن عباس ، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ مر النبی صلى اللہ علیہ وسلم بقبرین، ‏‏‏‏‏‏فقال:‏‏‏‏ انہما لیعذبان، ‏‏‏‏‏‏وما یعذبان فی کبیر، ‏‏‏‏‏‏اما احدہما فکان لا یستتر من البول، ‏‏‏‏‏‏واما الآخر فکان یمشی بالنمیمۃ، ‏‏‏‏‏‏ثم اخذ جریدۃ رطبۃ فشقہا نصفین فغرز فی کل قبر واحدۃ، ‏‏‏‏‏‏قالوا:‏‏‏‏ یا رسول اللہ، ‏‏‏‏‏‏لم فعلت ہذا ؟ قال:‏‏‏‏ لعلہ یخفف عنہما ما لم ییبسا، ‏‏‏‏‏‏وقال محمد بن المثنى ، ‏‏‏‏‏‏وحدثنا وکیع ، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ حدثنا الاعمش ، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ سمعت مجاہدا مثلہ یستتر من بولہ.

حدیث کا اردو ترجمہ

ہم سے محمد بن المثنی نے بیان کیا، انہوں نے کہا ہم سے محمد بن حازم نے بیان کیا، انہوں نے کہا ہم سے اعمش نے مجاہد کے واسطے سے روایت کیا، وہ طاؤس سے، وہ عبداللہ بن عباس (رض) سے روایت کرتے ہیں کہ (ایک مرتبہ) رسول اللہ دو قبروں پر گزرے تو آپ نے فرمایا کہ ان دونوں قبر والوں کو عذاب دیا جا رہا ہے اور کسی بڑے گناہ پر نہیں۔ ایک تو ان میں سے پیشاب سے احتیاط نہیں کرتا تھا اور دوسرا چغل خوری کیا کرتا تھا۔ پھر آپ نے ایک ہری ٹہنی لے کر بیچ سے اس کے دو ٹکڑے کئے اور ہر ایک قبر پر ایک ٹکڑا گاڑ دیا۔ لوگوں نے پوچھا کہ یا رسول اللہ ! آپ نے (ایسا) کیوں کیا ؟ آپ نے فرمایا، شاید جب تک یہ ٹہنیاں خشک نہ ہوں ان پر عذاب میں کچھ تخفیف رہے۔ ابن المثنی نے کہا کہ اس حدیث کو ہم سے وکیع نے بیان کیا، ان سے اعمش نے، انہوں نے مجاہد سے اسی طرح سنا۔

حدیث کا انگریزی ترجمہ (English Translation)

Narrated Ibn Abbas (RA): The Prophet ﷺ once passed by two graves and said, "These two persons are being tortured not for a major sin (to avoid). One of them never saved himself from being soiled with his urine, while the other used to go about with calumnies (to make enmity between friends).” The Prophet ﷺ then took a green leaf of a date-palm tree, split it into (pieces) and fixed one on each grave. They said, "O Allahs Apostle ﷺ ! Why have you done so?” He replied, "I hope that their punishment might be lessened till these (the pieces of the leaf) become dry.” (See the foot-note of Hadith 215).

اس پوسٹ کو آگے نشر کریں