صحیح بخاری – حدیث نمبر 275

صحیح بخاری – حدیث نمبر 275

باب: جب کوئی شخص مسجد میں ہو اور اسے یاد آئے کہ مجھ کو نہانے کی حاجت ہے تو اسی طرح نکل جائے اور تیمم نہ کرے۔

حدیث نمبر: 275
حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ مُحَمَّدٍ ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ حَدَّثَنَا عُثْمَانُ بْنُ عُمَرَ ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ أَخْبَرَنَا يُونُسُ ، ‏‏‏‏‏‏عَنِ الزُّهْرِيِّ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ أَبِي سَلَمَةَ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْأَبِي هُرَيْرَةَ ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ أُقِيمَتِ الصَّلَاةُ وَعُدِّلَتِ الصُّفُوفُ قياما، ‏‏‏‏‏‏فَخَرَجَ إِلَيْنَا رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، ‏‏‏‏‏‏فَلَمَّا قَامَ فِي مُصَلَّاهُ ذَكَرَ أَنَّهُ جُنُبٌ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ لَنَا:‏‏‏‏ مَكَانَكُمْ، ‏‏‏‏‏‏ثُمَّ رَجَعَ فَاغْتَسَلَ، ‏‏‏‏‏‏ثُمَّ خَرَجَ إِلَيْنَا وَرَأْسُهُ يَقْطُرُ فَكَبَّرَ فَصَلَّيْنَا مَعَهُ، ‏‏‏‏‏‏تَابَعَهُ عَبْدُ الْأَعْلَى ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ مَعْمَرٍ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ الزُّهْرِيِّ ، ‏‏‏‏‏‏وَرَوَاهُ الْأَوْزَاعِيُّ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ الزُّهْرِيِّ .

حدیث کی عربی عبارت (بغیر اعراب)

حدیث نمبر: 275
حدثنا عبد الله بن محمد ، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ حدثنا عثمان بن عمر ، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ أخبرنا يونس ، ‏‏‏‏‏‏عن الزهري ، ‏‏‏‏‏‏عن أبي سلمة ، ‏‏‏‏‏‏عنأبي هريرة ، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ أقيمت الصلاة وعدلت الصفوف قياما، ‏‏‏‏‏‏فخرج إلينا رسول الله صلى الله عليه وسلم، ‏‏‏‏‏‏فلما قام في مصلاه ذكر أنه جنب، ‏‏‏‏‏‏فقال لنا:‏‏‏‏ مكانكم، ‏‏‏‏‏‏ثم رجع فاغتسل، ‏‏‏‏‏‏ثم خرج إلينا ورأسه يقطر فكبر فصلينا معه، ‏‏‏‏‏‏تابعه عبد الأعلى ، ‏‏‏‏‏‏عن معمر ، ‏‏‏‏‏‏عن الزهري ، ‏‏‏‏‏‏ورواه الأوزاعي ، ‏‏‏‏‏‏عن الزهري .

حدیث کی عربی عبارت (مکمل اردو حروف تہجی میں)

حدیث نمبر: 275
حدثنا عبد اللہ بن محمد ، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ حدثنا عثمان بن عمر ، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ اخبرنا یونس ، ‏‏‏‏‏‏عن الزہری ، ‏‏‏‏‏‏عن ابی سلمۃ ، ‏‏‏‏‏‏عنابی ہریرۃ ، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ اقیمت الصلاۃ وعدلت الصفوف قیاما، ‏‏‏‏‏‏فخرج الینا رسول اللہ صلى اللہ علیہ وسلم، ‏‏‏‏‏‏فلما قام فی مصلاہ ذکر انہ جنب، ‏‏‏‏‏‏فقال لنا:‏‏‏‏ مکانکم، ‏‏‏‏‏‏ثم رجع فاغتسل، ‏‏‏‏‏‏ثم خرج الینا وراسہ یقطر فکبر فصلینا معہ، ‏‏‏‏‏‏تابعہ عبد الاعلى ، ‏‏‏‏‏‏عن معمر ، ‏‏‏‏‏‏عن الزہری ، ‏‏‏‏‏‏ورواہ الاوزاعی ، ‏‏‏‏‏‏عن الزہری .

حدیث کا اردو ترجمہ

ہم سے عبداللہ بن محمد مسندی نے بیان کیا، کہا ہم سے عثمان بن عمر نے بیان کیا، کہا ہم کو یونس نے خبر دی زہری کے واسطے سے، وہ ابوسلمہ سے، وہ ابوہریرہ (رض) سے کہ نماز کی تکبیر ہوئی اور صفیں برابر ہوگئیں، لوگ کھڑے تھے کہ رسول اللہ اپنے حجرے سے ہماری طرف تشریف لائے۔ جب آپ مصلے پر کھڑے ہوچکے تو یاد آیا کہ آپ جنبی ہیں۔ پس آپ نے ہم سے فرمایا کہ اپنی جگہ کھڑے رہو اور آپ واپس چلے گئے۔ پھر آپ نے غسل کیا اور واپس ہماری طرف تشریف لائے تو سر سے پانی کے قطرے ٹپک رہے تھے۔ آپ نے نماز کے لیے تکبیر کہی اور ہم نے آپ کے ساتھ نماز ادا کی۔ عثمان بن عمر سے اس روایت کی متابعت کی ہے عبدالاعلیٰ نے معمر سے اور وہ زہری سے۔ اور اوزاعی نے بھی زہری سے اس حدیث کو روایت کیا ہے۔

حدیث کا انگریزی ترجمہ (English Translation)

Narrated Abu Hurairah (RA): Once the call (Iqama) for the prayer was announced and the rows were straightened. Allahs Apostle ﷺ came out; and when he stood up at his Musalla, he remembered that he was Junub. Then he ordered us to stay at our places and went to take a bath and then returned with water dropping from his head. He said, "Allahu-Akbar”, and we all offered the prayer with him.

اس پوسٹ کو آگے نشر کریں