Deprecated: version_compare(): Passing null to parameter #2 ($version2) of type string is deprecated in /home/u482667647/domains/ihyas.com/public_html/DifaeHadith/wp-content/plugins/elementor/core/experiments/manager.php on line 170
صحیح بخاری - حدیث نمبر 29 - Difae Hadith - دفاع حدیث

صحیح بخاری – حدیث نمبر 29

صحیح بخاری – حدیث نمبر 29

خاوند کی ناشکری کے بیان میں اور ایک کفر کا (اپنے درجہ میں) دوسرے کفر سے کم ہونے کے بیان میں

حدیث نمبر: 29
حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ مَسْلَمَةَ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ مَالِكٍ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ زَيْدِ بْنِ أَسْلَمَ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ عَطَاءِ بْنِ يَسَارٍ ، ‏‏‏‏‏‏عَنْ ابْنِ عَبَّاسٍ ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ قَالَ النَّبِيُّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ:‏‏‏‏ أُرِيتُ النَّارَ فَإِذَا أَكْثَرُ أَهْلِهَا النِّسَاءُ يَكْفُرْنَ، ‏‏‏‏‏‏قِيلَ:‏‏‏‏ أَيَكْفُرْنَ بِاللَّهِ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ يَكْفُرْنَ الْعَشِيرَ، ‏‏‏‏‏‏وَيَكْفُرْنَ الْإِحْسَانَ لَوْ أَحْسَنْتَ إِلَى إِحْدَاهُنَّ الدَّهْرَ، ‏‏‏‏‏‏ثُمَّ رَأَتْ مِنْكَ شَيْئًا، ‏‏‏‏‏‏قَالَتْ:‏‏‏‏ مَا رَأَيْتُ مِنْكَ خَيْرًا قَطُّ.

حدیث کی عربی عبارت (بغیر اعراب)

حدیث نمبر: 29
حدثنا عبد الله بن مسلمة ، ‏‏‏‏‏‏عن مالك ، ‏‏‏‏‏‏عن زيد بن أسلم ، ‏‏‏‏‏‏عن عطاء بن يسار ، ‏‏‏‏‏‏عن ابن عباس ، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ قال النبي صلى الله عليه وسلم:‏‏‏‏ أريت النار فإذا أكثر أهلها النساء يكفرن، ‏‏‏‏‏‏قيل:‏‏‏‏ أيكفرن بالله، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ يكفرن العشير، ‏‏‏‏‏‏ويكفرن الإحسان لو أحسنت إلى إحداهن الدهر، ‏‏‏‏‏‏ثم رأت منك شيئا، ‏‏‏‏‏‏قالت:‏‏‏‏ ما رأيت منك خيرا قط.

حدیث کی عربی عبارت (مکمل اردو حروف تہجی میں)

حدیث نمبر: 29
حدثنا عبد اللہ بن مسلمۃ ، ‏‏‏‏‏‏عن مالک ، ‏‏‏‏‏‏عن زید بن اسلم ، ‏‏‏‏‏‏عن عطاء بن یسار ، ‏‏‏‏‏‏عن ابن عباس ، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ قال النبی صلى اللہ علیہ وسلم:‏‏‏‏ اریت النار فاذا اکثر اہلہا النساء یکفرن، ‏‏‏‏‏‏قیل:‏‏‏‏ ایکفرن باللہ، ‏‏‏‏‏‏قال:‏‏‏‏ یکفرن العشیر، ‏‏‏‏‏‏ویکفرن الاحسان لو احسنت الى احداہن الدہر، ‏‏‏‏‏‏ثم رات منک شیئا، ‏‏‏‏‏‏قالت:‏‏‏‏ ما رایت منک خیرا قط.

حدیث کا اردو ترجمہ

اس حدیث کو ہم سے عبداللہ بن مسلمہ نے بیان کیا، وہ امام مالک سے، وہ زید بن اسلم سے، وہ عطاء بن یسار سے، وہ عبداللہ ابن عباس (رض) سے نقل کرتے ہیں کہ نبی کریم نے فرمایا مجھے دوزخ دکھلائی گئی تو اس میں زیادہ تر عورتیں تھیں جو کفر کرتی ہیں۔ کہا گیا یا رسول اللہ ! کیا وہ اللہ کے ساتھ کفر کرتی ہیں ؟ آپ نے فرمایا کہ خاوند کی ناشکری کرتی ہیں۔ اور احسان کی ناشکری کرتی ہیں۔ اگر تم عمر بھر ان میں سے کسی کے ساتھ احسان کرتے رہو۔ پھر تمہاری طرف سے کبھی کوئی ان کے خیال میں ناگواری کی بات ہوجائے تو فوراً کہہ اٹھے گی کہ میں نے کبھی بھی تجھ سے کوئی بھلائی نہیں دیکھی۔

حدیث کا انگریزی ترجمہ (English Translation)

Narrated Ibn Abbas (RA): The Prophet ﷺ said: "I was shown the Hell-fire and that the majority of its dwellers were women who were ungrateful.” It was asked, "Do they disbelieve in Allah”? (or are they ungrateful to Allah?) He replied, "They are ungrateful to their husbands and are ungrateful for the favors and the good (charitable deeds) done to them. If you have always been good (benevolent) to one of them and then she sees something in you (not of her liking), she will say, I have never received any good from you”.

اس پوسٹ کو آگے نشر کریں